دعائے افتتاح

دعائے افتتاحاَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَ فْتَتِحُ الثَّنائَ بِحَمْدِکَ وَٲَ نْتَ مُسَدِّدٌ لِلصَّوابِ بِمَنِّکَ وَٲَیْقَنْتُ ٲَنَّکَ ٲَنْتَ اے معبود! تیری حمد کے ذریعے تیری تعریف کا آغاز کرتا ہوں اور تو اپنے احسان سے راہ راست دکھانے والا ہے اور مجھے یقین ہے
ٲَرْحَمُ الرَّاحِمِینَ فِی مَوْضِعِ الْعَفْوِ وَالرَّحْمَۃِ وَٲَشَدُّ الْمُعاقِبِینَ فِی مَوْضِعِ النَّکالِ
کہ تو معافی دینے مہربانی کرنے کے مقام پر سب سے بڑھ کر رحم و کرم کرنے والا ہے اور شکنجہ و عذاب کے موقع پر سب سے سخت
وَالنَّقِمَۃِ، وَٲَعْظَمُ الْمُتَجَبِّرِینَ فِی مَوْضِعِ الْکِبْرِیائِ وَالْعَظَمَۃِ ۔ اَللّٰھُمَّ ٲَذِنْتَ لِی فِی
عذاب دینے والا ہے اور بڑائی اور بزرگی کے مقام پر تو تمام قاہروں اور جابروں سے بڑھا ہوا ہے اے اﷲ ! تو نے مجھے اجازت
دُعائِکَ وَمَسْٲَلَتِکَ فَاسْمَعْ یَا سَمِیعُ مِدْحَتِی وَٲَجِبْ یَا رَحِیمُ دَعْوَتِی وَٲَقِلْ یَا غَفُورُ
دے رکھی ہے کہ تجھ سے دعا و سوال کروں پس اے سننے والے اپنی یہ تعریف سن اور اے مہربان میری دعا قبول فرما اے بخشنے والے
عَثْرَتِی، فَکَمْ یَا إلھِی مِنْ کُرْبَۃٍ قَدْ فَرَّجْتَہا، وَھُمُومٍ قَدْ کَشَفْتَہا، وَعَثْرَۃٍ قَدْ ٲَ قَلْتَہا
میری خطا معاف کرپس اے میرے معبود ! کتنی ہی مصیبتوں کو تو نے دور کیا اور کتنے ہی اندیشوں کو ہٹایا اور خطاؤں سے در گزر کی
وَرَحْمَۃٍ قَدْ نَشَرْتَہا وَحَلْقَۃِ بَلائٍ قَدْ فَکَکْتَہا؟ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الَّذِی لَمْ یَتَّخِذْ صاحِبَۃً وَلاَ
رحمت کو عام کیا اور بلاؤں کے گھیرے کو توڑا اور رہائی دی حمد اس اﷲ کیلئے ہے جس نے نہ کسی کو اپنی زوجہ بنایا اور نہ کسی کو
وَلَداً وَلَمْ یَکُنْ لَہُ شَرِیکٌ فِی الْمُلْکِ وَلَمْ یَکُنْ لَہُ وَ لِیٌّ مِنَ الذُّلِّ وَکَبِّرْھُ تَکْبِیراً
اپنا بیٹا بنایا نہ ہی سلطنت میں اس کا کوئی شریک ہے اور نہ وہ عاجز ہے کہ کوئی اس کا سر پرست ہو اس کی بڑائی بیان کرو بہت بڑائی
الْحَمْدُ لِلّٰہِِ بِجَمِیعِ مَحامِدِھِ کُلِّہا عَلَی جَمِیعِ نِعَمِہِ کُلِّہا الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الَّذِی لاَ مُضادَّ لَہُ
حمد اﷲ ہی کیلئے ہے اس کی تمام خوبیوں اور اس کی ساری نعمتوں کے ساتھ حمد اس اﷲکیلئے ہے جس کی حکومت میں
فِی مُلْکِہِ، وَلاَ مُنازِعَ لَہُ فِی ٲَمْرِھِ ۔ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الَّذِی لاَ شَرِیکَ لَہُ فِی خَلْقِہِ، وَلاَ
اس کا کوئی مخالف نہیں نہ اس کے حکم میں کوئی رکاوٹ ڈالنے والا ہے حمد اس اﷲ کیلئے ہے جس کی آفرینش میں کوئی اس کا شریک نہیں
شَبِیہَ لَہُ فِی عَظَمَتِہِ ۔ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الْفاشِی فِی الْخَلْقِ ٲَمْرُھُ وَحَمْدُھُ، الظَّاھِرِ بِالْکَرَمِ
اور اسکی بڑائی میں کوئی اس جیسا نہیں حمد اس اﷲ کیلئے ہے کہ جسکا حکم اور حمد خلق میں آشکار ہے اس کی شان اس کی بخشش کے ساتھ
مَجْدُھُ، الْباسِطِ بِالْجُودِ یَدَھُ، الَّذِی لاَ تَنْقُصُ خَزائِنُہُ، وَلاَ تَزِیدُھُ کَثْرَۃُ الْعَطائِ
ظاہر ہے بن مانگے دینے میں اس کا ہاتھ کھلا ہے وہی ہے جس کے خزانہ نے کم نہیں ہوتے اور کثرت کے ساتھ عطا کرنے سے اس
إلاَّ جُوداً وَکَرَماً إنَّہُ ھُوَ الْعَزِیزُ الْوَہَّابُ ۔ اَللّٰھُمَّ إنِّی ٲَسْٲَلُکَ قَلِیلاً مِنْ
کی بخشش اور سخاوت میں اضافہ ہوتا ہے کیونکہ وہ زبردست عطا کرنے والا ہے اے معبود! میں سوال کرتا ہوں تجھ سے بہت میں سے
کَثِیرٍ، مَعَ حاجَۃٍ بِی إلَیْہِ عَظِیمَۃٍ وَغِناکَ عَنْہُ قَدِیمٌ وَھُوَ عِنْدِی کَثِیرٌ، وَھُوَ عَلَیْکَ
تھوڑے کا جبکہ مجھے اس کی بہت زیادہ حاجت ہے اور تو ہمیشہ اس سے بے نیاز ہے وہ نعمت میرے لیئے بہت بڑی ہے اور تیرے
سَھْلٌ یَسِیرٌ ۔ اَللّٰھُمَّ إنَّ عَفْوَکَ عَنْ ذَ نْبِی، وَتَجاوُزَکَ عَنْ خَطِیئَتِی، وَصَفْحَکَ عَنْ
لئے اس کا دینا آسان ہے اے معبود! بے شک تیرا میرے گناہ کو معاف کرنا میری خطا سے تیری در گزر میرے ستم سے تیری چشم
ظُلْمِی وَسَِتْرَکَ عَلَی قَبِیحِ عَمَلِی، وَحِلْمَکَ عَنْ کَثِیرِجُرْمِی عِنْدَ مَا کانَ مِنْ خَطَ إی
پوشی میرے برے عمل کی پردہ پوشی میرے بہت سے جرائم پر تیری برد باری ہے جبکہ ان میں سے بعض بھول کر اور بعض میں نے جان
وَعَمْدِی ٲَطْمَعَنِی فِی ٲَنْ ٲَسْٲَلَکَ مَا لاَ ٲَسْتَوْجِبُہُ مِنْکَ الَّذِی رَزَقْتَنِی مِنْ رَحْمَتِکَ
بوجھ کر کئے ہیں تب بھی اس سے مجھے طمع ہوئی کہ میں تجھ سے وہ مانگوں جس کا میں حقدار نہیں چنانچہ تو نے اپنی رحمت سے مجھے روزی
وَٲَرَیْتَنِی مِنْ قُدْرَتِکَ وَعَرَّفْتَنِی مِنْ إجابَتِکَ فَصِرْتُ ٲَدْعُوکَ آمِناً وَٲَسْٲَلُکَ
دی اور اپنی قدرت کے کرشمے دکھائے قبولیت کی پہچان کرائی پس اب میں با امن ہوکر تجھے پکارتا ہوں اور سوال کرتا ہوں
مُسْتَٲْنِساً لاَ خائِفاً وَلاَ وَجِلاً، مُدِلاًّ عَلَیْکَ فِیما قَصَدْتُ فِیہِ إلَیْکَ، فَ إنْ ٲَبْطَٲَ عَنِّی
الفت سے نہ ڈرتے اور گھبراتے ہوئے اور مجھے ناز ہے کہ اس بارے میں تیری بارگاہ میں آیا ہوں پس اگر تو نے قبولیت میں دیر کی تو
عَتَبْتُ بِجَھْلِی عَلَیْکَ وَلَعَلَّ الَّذِی ٲَبْطَٲَ عَنِّی ھُوَ خَیْرٌ لِی لِعِلْمِکَ بِعاقِبَۃِ الاَُْمُورِ، فَلَمْ
میں بوجہ نادانی تجھ سے شکوہ کروں گا اگر چہ وہ تاخیر کاموں کے نتائج سے متعلق تیرے علم میں میرے لیے بہتری کی حامل ہو پس میں
ٲَرَ مَوْلیً کَرِیماً ٲَصْبَرَ عَلَی عَبْدٍ لَئِیمٍ مِنْکَ عَلَیَّ، یَا رَبِّ ، إنَّکَ تَدْعُونِی فَٲُوَلِّی عَنْکَ
نے تیرے سوا کوئی مولا نہیں دیکھا جو میرے جیسے پست بندے پر مہربان و صابر ہو۔ اے پروردگار! تو مجھے پکارتا ہے تو میں تجھ سے
وَتَتَحَبَّبُ إلَیَّ فٲَتَبَغَّضُ إلَیْکَ، وَتَتَوَدَّدُ إلَیَّ فَلاَ ٲَقْبَلُ مِنْکَ کَٲَنَّ لِیَ التَّطَوُّلَ عَلَیْکَ
منہ موڑتا ہوں تو مجھ سے محبت کرتا ہے میں تجھ سے خفگی کرتا ہوں تو میرے ساتھ الفت کرتا ہے میں بے رخی کرتا ہوں جیسے کہ میرا تجھ پر
فَلَمْ یَمْنَعْکَ ذلِکَ مِنَ الرَّحْمَۃِ لِی وَالْاِحْسانِ إلَیَّ وَالتَّفَضُّلِ عَلَیَّ بِجُودِکَ وَکَرَمِکَ
کوئی احسان رہا ہو تو بھی میرا یہ طرز عمل تجھے مجھ پر رحمت فرمانے اور مجھ پر اپنی عطا و بخشش کیساتھ فضل و احسان کرنے سے باز نہیں
فَارْحَمْ عَبْدَکَ الْجاھِلَ وَجُدْ عَلَیْہِ بِفَضْلِ إحْسانِکَ إنَّکَ جَوادٌ کَرِیمٌ ۔ الْحَمْدُ
رکھتا پس اپنے اس نادان بندے پر رحم کر اور اس پر اپنے فضل و احسان سے سخاوت فرما بے شک تو بہت دینے والا سخی ہے حمد ہے اس
لِلّٰہِِ مالِکِ الْمُلْکِ، مُجْرِی الْفُلْکِ، مُسَخِّرِ الرِّیاحِ، فالِقِ الْاِصْباحِ، دَیَّانِ الدِّینِ، رَبِّ
اللہ کے لیے جو سلطنت کا مالک کشتی کو رواں کرنیوالا ہواؤں کو قابو رکھنے والا صبح کو روشن کرنے والا او رقیامت میں جزا دینے والا
الْعالَمِینَ ۔ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ عَلی حِلْمِہِ بَعْدَ عِلْمِہِ، وَالْحَمْدُ لِلّٰہِِ عَلَی عَفْوِھِ بَعْدَ قُدْرَتِہِ
جہانوں کا پروردگار ہے حمد ہے اللہ کی کہ جانتے ہوئے بھی بردباری سے کام لیتا ہے اورحمد ہے اس اللہ کی جو قوت کے باوجود معاف
وَالْحَمْدُ لِلّٰہِِ عَلَی طُولِ ٲَناتِہِ فِی غَضَبِہِ وَھُوَ قادِرٌ عَلَی مَا یُرِیدُ ۔ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ خالِقِ
کرتا ہے اور حمد ہے اس اللہ کی جو حالت غضب میں بھی بڑا بردبار ہے اور وہ جو چاہے اسے کرگزرنے کی طاقت رکھتا ہے حمد ہے اس
الْخَلْقِ، باسِطِ الرِّزْقِ، فالِقِ الْاِصْباحِ، ذِی الْجَلالِ وَالْاِکْرامِ وَالْفَضْلِ وَالْاِنْعامِ
اللہ کی جو مخلوق کو پیدا کرنیوالا روزی کشادہ کرنیوالا صبح کو روشنی بخشنے والا صاحب جلالت و کرم اور فضل و نعمت کا مالک ہے
الَّذِی بَعُدَ فَلا یُریٰ، وَقَرُبَ فَشَھِدَ النَّجْویٰ، تَبارَکَ وَتَعالی الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الَّذِی لَیْسَ
جو ایسا دور ہے کہ نظر نہیںآتا اور اتنا قریب ہے کہ سرگوشی کو بھی جانتا ہے وہ مبارک اور برتر ہے حمد ہے اس اﷲ کی جس کا ہمسر نہیں جو
لَہُ مُنازِعٌ یُعادِلُہُ، وَلاَ شَبِیہٌ یُشاکِلُہُ، وَلاَ ظَھِیرٌ یُعاضِدُہُ، قَھَرَ بِعِزَّتِہِ الْاَعِزَّائَ
جو اس سے جھگڑا کرے نہ کوئی اس جیسا ہے کہ اس کاہمشکل ہو نہ کوئی اس کا مددگار و ہمکار ہے وہ اپنی عزت میں سب عزت والوں پر
وَتَواضَعَ لِعَظَمَتِہِ الْعُظَمائُ، فَبَلَغَ بِقُدْرَتِہِ مَا یَشائُ ۔ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الَّذِی یُجِیبُنِی حِینَ
غالب ہے اور سبھی عظمت والے اس کی عظمت کے آگے جھکتے ہیں وہ جو چاہے اس پر قادر ہے حمد ہے اللہ کی جسے پکارتا ہوں تو وہ
ٲُنادِیہِ، وَیَسْتُرُ عَلَیَّ کُلَّ عَوْرَۃٍ وَٲَ نَا ٲَعْصِیہِ، وَیُعَظِّمُ النِّعْمَۃَ عَلَیَّ فَلاَ ٲُجازِیہِ
جواب دیتا ہے اور میری برائی کی پردہ پوشی کرتا ہے میںاسکی نافرمانی کرتا ہوں تو بھی مجھے بڑی بڑی نعمتیں دیتا ہے کہ جن کا بدلہ میں
فَکَمْ مِنْ مَوْھِبَۃٍ ھَنِیئۃٍ قَدْ ٲَعْطانِی، وَعَظِیمَۃٍ مَخُوفَۃٍ قَدْ کَفانِی، وَبَھْجَۃٍ مُو نِقَۃٍ
اسے نہیں دیتا پس اس نے مجھ پر کتنی ہی خوشگوار عنایتیں اوربخششیں کی ہیں کتنی ہی خطرناک آفتوں سے مجھے بچالیا ہے کئی حیرت انگیز
قَدْ ٲَرانِی فَٲُ ثْنِی عَلَیْہِ حامِداً، وَٲَذْکُرُھُ مُسَبِّحاً ۔ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الَّذِی لاَ یُھْتَکُ حِجابُہُ
خوشیاں مجھے دکھائی ہیں پس ان پر اس کی حمد و ثنا کرتا ہوں اور لگاتار اس کا نام لیتا ہوں حمد ہے اللہ کی جس کا پردہ ہٹایا نہیںجاسکتا
وَلاَ یُغْلَقُ بابُہُ، وَلاَ یُرَدُّ سائِلُہُ، وَلاَ یُخَیَّبُ آمِلُہُ الْحَمْدُ لِلّٰہِِ الَّذِی یُؤْمِنُ الْخائِفِینَ
اس کا در رحمت بند نہیں ہوتا اس کا سائل خالی نہیں جاتا اور اس کا امیدوار مایوس نہیں ہوتا حمد ہے اللہ کی جو ڈرنے والوں کو پناہ دیتا ہے
وَیُنَجِّی الصَّالِحِینَ، وَیَرْفَعُ الْمُسْتَضْعَفِینَ، وَیَضَعُ الْمُسْتَکْبِرِینَ، وَیُھْلِکُ مُلُوکاً
نیکوکاروں کو نجات دیتا ہے لوگوں کے دبائے ہوؤں کو ابھارتا ہے بڑا بننے والوں کو نیچا دکھاتا ہے بادشاہوں کو تباہ کرتا اور ان کی جگہ
وَیَسْتَخْلِفُ آخَرِینَ وَالْحَمْدُ لِلّٰہِِ قاصِمِ الْجَبَّارِینَ مُبِیرِ الظَّالِمِینَ، مُدْرِکِ الْہارِبِینَ
دوسروں کو لے آتا ہے۔ حمد ہے اللہ کی کہ وہ دھونسیوں کا زور توڑنے والا ظالموں کو برباد کرنے والا فریادیوں کو پہنچنے والا
نَکالِ الظَّالِمِینَ صَرِیخِ الْمُسْتَصْرِخِینَ مَوْضِعِ حاجاتِ الطَّالِبِینَ مُعْتَمَدِ الْمُؤْمِنِینَ
اور بے انصافوں کو سزا دینے والا ہے وہ دادخواہوں کا دادرس حاجات طلب کرنے والوں کا ٹھکانہ اور مومنوں کی ٹیک ہے
الْحَمْدُ لِلّٰہِ الَّذِی مِنْ خَشْیَتِہِ تَرْعُدُ السَّمائُ وَسُکَّانُہا، وَتَرْجُفُ الْاَرْضُ وَعُمَّارُہا
حمد ہے اس اللہ کی جس کے خوف سے آسمان اور آسمان والے لرزتے ہیں زمین اور اس کے آبادکار دہل جاتے ہیں
وَتَمُوجُ الْبِحارُ وَمَنْ یَسْبَحُ فِی غَمَراتِہا الْحَمْدُ لِلّٰہِ الَّذِی ھَدانا لِہذا وَمَا کُنَّا لِنَھْتَدِیَ
سمندر لرزتے ہیں اور وہ جو انکے پانیوں میں تیرتے ہیں حمد ہے اللہ کی جس نے ہمیں یہ راہ ہدایت دکھائی اور ہم ہرگز ہدایت نہ پاسکتے
لَوْلاَ ٲَنْ ھَدَانا اﷲُ ۔ الْحَمْدُ لِلّٰہِ الَّذِی یَخْلُقُ وَلَمْ یُخْلَقْ، وَیَرْزُقُ وَلاَ یُرْزَقُ
اگر اللہ تعالیٰ ہمیں ہدایت نہ فرماتا حمد ہے اس اللہ کی جو خلق کرتا ہے اور وہ مخلوق نہیں وہ رزق دیتا ہے اور وہ مرزوق نہیں
وَیُطْعِمُ وَلاَ یُطْعَمُ وَیُمِیتُ الْاَحْیائَ وَیُحْیِی الْمَوْتی وَھُوَ حَیٌّ لاَ یَمُوتُ بِیَدِہِ الْخَیْرُ
وہ کھانا کھلاتا ہے اور کھاتا نہیں وہ زندوں کو مارتاہے اور مردوں کو زندہ کرتا ہے وہ ایسا زندہ ہے جسے موت نہیں بھلائی اسیکے ہاتھ میں ہے
وَھُوَ عَلَی کُلِّ شَیْئٍ قَدِیرٌ اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلَی مُحَمَّدٍ عَبْدِکَ وَرَسُولِکَ وَٲَمِینِکَ وَصَفِیِّکَ
اور وہ ہرچیز پر قدرت رکھتا ہے اے معبود! اپنی حضرت محمد(ص) پر رحمت نازل فرما جو تیرے بندے تیرے رسول(ص) تیرے امانتدار تیرے
وَحَبِیبِکَ وَخِیَرَتِکَ مِنْ خَلْقِکَ وَحافِظِ سِرِّکَ، وَمُبَلِّغِ رِسالاتِکَ ٲَ فْضَلَ وَٲَحْسَنَ
برگزیدہ تیرے حبیب اور تیری مخلوق میں سے تیرے پسندیدہ ہیں تیرے راز کے پاسدار ہیں اور تیرے پیغاموں کے پہنچانے
وَٲَجْمَلَ وَٲَکْمَلَ وَٲَزْکی وَٲَ نْمی وَٲَطْیَبَ وَٲَطْھَرَ وَٲَسْنی وَٲَکْثَرَ مَا صَلَّیْتَ
والے ہیں ان پر رحمت کر بہترین نیکوترین زیباترین کامل ترین روئیدہ ترین پاکیزہ ترین شفاف ترین روشن ترین اور تو نے جو بہت
وَبارَکْتَ وَتَرَحَّمْتَ وَتَحَنَّنْتَ وَسَلَّمْتَ عَلَی ٲَحَدٍ مِنْ عِبادِکَ وَٲَ نْبِیائِکَ وَرُسُلِکَ
رحمت کی برکت دی نوازش کی مہربانی کی اور درود بھیجا اپنے بندوں میں اپنے نبیوں اپنے رسولوں اور اپنے برگزیدوں میں سے کسی
وَصِفْوَتِکَ وَٲَھْلِ الْکَرامَۃِ عَلَیْکَ مِنْ خَلْقِکَ ۔ اَللّٰھُمَّ وَصَلِّ عَلَی عَلِیٍّ ٲَمِیرِ الْمُؤْمِنِینَ
ایک پر اور جو تیرے ہاں بزرگی والے ہیں تیری مخلوق میں سے۔ اے معبود! امیرالمومنین علی(ع) پر رحمت فرما
وَوَصِیِّ رَسُولِ رَبِّ الْعالَمِینَ عَبْدِکَ وَوَ لِیِّکَ وَٲَخِی رَسُولِکَ وَحُجَّتِکَ عَلَی خَلْقِکَ
جو جہانوں کے پروردگار کے رسول(ص) کے وصی ہیںتیرے بندے تیرے ولی تیرے رسول(ص) کے بھائی تیری مخلوق پر تیری
وَآیَتِکَ الْکُبْری، وَالنَّبَاََ الْعَظِیمِ، وَصَلِّ عَلَی الصِّدِّیقَۃِ الطَّاھِرَۃِ فاطِمَۃَ سَیِّدَۃِ نِسائِ
حجت تیری بہت بڑی نشانی اور بہت نبأ عظیم ہیں اور صدیقہ طاہرہ فاطمہ =پر رحمت فرما جو تمام جہانوں کی عورتوں کی
الْعالَمِینَ وَصَلِّ عَلَی سِبْطَیِ الرَّحْمَۃِ وَ إمامَیِ الْھُدی الْحَسَنِ وَالْحُسَیْنِ سَیِّدَیْ
سردار ہیں اور نبی(ص) رحمت کے دو نواسوں اور ہدایت والے دو ائمہ(ع) حسن(ع) و حسین(ع) پر رحمت فرما جو جنت کے
شَبابِ ٲَھْلِ الْجَنَّۃِ وَصَلِّ عَلَی ٲَئِمَّۃِ الْمُسْلِمِینِّ عَلِیِّ بْنِ الْحُسَیْنِ وَمُحَمَّدِ بْنِ عَلِیٍّ
جوانوں کے سید و سردار ہیں۔ اور مسلمانوں کے ائمہ(ع) پر رحمت فرما کہ وہ علی زین العابدین(ع) محمد الباقر(ع)
وَجَعْفَرِ بْنِ مُحَمَّدٍ وَمُوسَی بْنِ جَعْفَرٍ وَعَلِیِّ بْنِ مُوسی وَمُحَمَّدِ بْنِ عَلِیٍّ وَعَلِیِّ بْنِ
جعفر الصادق(ع) موسیٰ الکاظم(ع) علی الرضا(ع) محمد تقی الجواد(ع) علی نقی(ع)
مُحَمَّدٍ وَالْحَسَنِ بْنِ عَلِیٍّ وَالْخَلَفِ الْہادِی الْمَھْدِیِّ حُجَجِکَ عَلَی عِبادِکَ وَٲُمَنائِکَ
الہادی(ع) حسن العسکری(ع) اور بہترین سپوت ہادی المہدی(ع) ہیں جو تیرے بندوں پر تیری حجتیں اور تیرے شہروں
فِی بِلادِکَ صَلاۃً کَثِیرَۃً دائِمَۃً ۔ اَللّٰھُمَّ وَصَلِّ عَلَی وَ لیِّ ٲَمْرِکَ الْقائِمِ الْمُؤَمَّلِ
میں تیرے امین ہیں ان پر رحمت فرما بہت بہت ہمیشہ ہمیشہ اے معبود اپنے ولی امر پر رحمت فرما کہ جو قائم، امیدگاہ
وَالْعَدْلِ الْمُنْتَظَرِ وَحُفَّہُ بِمَلائِکَتِکَ الْمُقَرَّبِینَ وَٲَیِّدْہُ بِرُوحِ الْقُدُسِ یَا رَبَّ الْعالَمِینَ
عادل اور منتظر ہے اسکے گرد اپنے مقرب فرشتوں کا گھیرا لگادے اور روح القدس کے ذریعے اسکی تائید فرما اے جہانوں کے پروردگار
اَللّٰھُمَّ اجْعَلْہُ الدَّاعِیَ إلی کِتابِکَ وَالْقائِمَ بِدِینِکَ اسْتَخْلِفْہُ فِی الْاَرْضِ کَمَا اسْتَخْلَفْتَ
اے معبود! اسے اپنی کتاب کی طرف دعوت دینے والا اور اپنے دین کیلئے قائم قرار دے اسے زمین میںاپنا خلیفہ بنا جیسے ان کو خلیفہ
الَّذِینَ مِنْ قَبْلِہِ، مَکِّنْ لَہُ دِینَہُ الَّذِی ارْتَضَیْتَہُ لَہُ، ٲَبْدِلْہُ مِنْ بَعْدِ خَوْفِہِ ٲَمْناً یَعْبُدُکَ
بنایا جو اس سے پہلے ہو گزرے ہیں اپنے پسندیدہ دین کو اس کیلئے پائیدار بنادے اسکے خوف کے بعد اسے امن دے کہ وہ تیرا
لاَ یُشْرِکُ بِکَ شَیْئاً ۔ اَللّٰھُمَّ ٲَعِزَّھُ وَٲَعْزِزْ بِہِ، وَانْصُرْھُ وَانْتَصِرْ بِہِ، وَانْصُرْھُ
عبادت گزار ہے کسی کو تیرا شریک نہیں بناتا۔ اے معبود! اسے معزز فرما اور اس کے ذریعے مجھے عزت دے میں اسکی مدد کرو اور اس
نَصْراً عَزِیزاً، وَافْتَحْ لَہُ فَتْحاً یَسِیراً، وَاجْعَلْ لَہُ مِنْ لَدُنْکَ سُلْطاناً نَصِیراً
کے ذریعے میری مدد فرما اسے باعزت مدد دے اور اسے آسانی کے ساتھ فتح دے اور اسے اپنی طرف سے قوت والا مددگار عطا فرما
اَللّٰھُمَّ ٲَظْھِرْ بِہِ دِینَکَ وَسُنَّۃَ نَبِیِّکَ حَتَّی لاَ یَسْتَخْفِیَ بِشَیْئٍ مِنَ الْحَقِّ مَخافَۃَ ٲَحَدٍ
اے معبود! اس کے ذریعے اپنے دین اور اپنے نبی(ص) کی سنت کو ظاہر فرما یہاں تک کہ حق میں سے کوئی چیز مخلوق کے خوف سے مخفی و
مِنَ الْخَلْقِ ۔ اَللّٰھُمَّ إنَّا نَرْغَبُ إلَیْکَ فِی دَوْلَۃٍ کَرِیمَۃٍ تُعِزُّ بِھَا الْاِسْلامَ وَٲَھْلَہُ
پوشیدہ نہ رہ جائے اے معبود! ہم ایسی برکت والی حکومت کی خاطر تیری طرف رغبت رکھتے ہیں جس سے تو اسلام و اہل اسلام کو قوت
وَتُذِلُّ بِھَا النِّفاقَ وَٲَھْلَہُ، وَتَجْعَلُنا فِیہا مِنَ الدُّعاۃِ إلَی طاعَتِکَ، وَالْقادَۃِ إلی
دے اور نفاق و اہل نفاق کو ذلیل کرے اور اس حکومت میں ہمیں اپنی اطاعت کیطرف بلانے والے اور اپنے راستے کیطرف رہنمائی
سَبِیلِکَ، وَتَرْزُقُنا بِہا کَرامَۃَ الدُّنْیا وَالاَْخِرَۃِ اَللّٰھُمَّ مَا عَرَّفْتَنا مِنَ الْحَقِّ
کرنے والے قرار دے اور اس کے ذریعے ہمیں دنیا و آخرت کی عزت دے اے معبود! جس حق کی تو نے ہمیں معرفت کرائی اسکے
فَحَمِّلْناھُ، وَمَا قَصُرْنا عَنْہُ فَبَلِّغْناھُ اَللّٰھُمَّ الْمُمْ بِہ شَعَثَنا، وَاشْعَبْ
تحمل کی توفیق دے اور جس سے ہم قاصر رہے اس تک پہنچادے اے معبود اسکے ذریعے ہم بکھروں کو جمع کردے اسکے ذریعے
بِہِ صَدْعَنا، وَارْتُقْ بِہِ فَتْقَنا، وَکَثِّرْ بِہِ قِلَّتَنا، وَٲَعْزِزْ بِہِ ذِلَّتَنا، وَٲَغْنِ بِہِ عائِلَنا
ہمارے جھگڑے ختم کر اور ہماری پریشانی دور فرما اسکے ذریعے ہماری قلت کوکثرت اور ذلت کو عزت میں بدل دے اسکے ذریعے
وَاقْضِ بِہِ عَنْ مُغْرَمِنا، وَاجْبُرْ بِہِ فَقْرَنا، وَسُدَّ بِہِ خَلَّتَنا، وَیَسِّرْ
ہمیں نادار سے تونگر بنا اور ہمارے قرض ادا کر دے اسکے ذریعے ہمارا فقر دور فرما دے ہماری حاجتیں پوری کر دے اور تنگی کو آسانی
بِہِ عُسْرَنا، وَبَیِّضْ بِہِ وُجُوھَنا، وَفُکَّ بِہِ ٲَسْرَنا، وَٲَ نْجِحْ بِہِ طَلِبَتَنا، وَٲَ نْجِزْ بِہِ
میں بدل دے اس کے ذریعے ہمارے چہرے روشن کر اور ہمارے قیدیوں کو رہائی دے اس کے ذریعے ہماری حاجات بر لا اور
مَواعِیدَنا، وَاسْتَجِبْ بِہِ دَعْوَتَنا، وَٲَعْطِنا بِہِ سُؤْلَنا، وَبَلِّغْنا بِہِ مِنَ الدُّنْیا وَالاَْخِرَۃِ
ہمارے وعدے نبھا دے اسکے ذریعے ہماری دعائیں قبول فرما اور ہمارے سوال پورے کر دے اس کے ذریعے دنیا و آخرت میں
آمالَنا، وَٲَعْطِنا بِہِ فَوْقَ رَغْبَتِنا، یَا خَیْرَ الْمَسْؤُولِینَ، وَٲَوْسَعَ
ہماری امیدیں پوری فرما اور ہمیں ہماری درخواست سے زیادہ عطا کر اے سوال کئے جانے والوں میں بہترین۔اور اے سب سے
الْمُعْطِینَ، اشْفِ بِہِ صُدُورَنا، وَٲَذْھِبْ بِہِ غَیْظَ قُلُوبِنا، وَاھْدِنا بِہِ لِمَا اخْتُلِفَ فِیہِ
زیادہ عطا کرنے والے اس کے ذریعے ہمارے سینوں کو شفا دے اور ہمارے دلوں سے بغض و کینہ مٹا دیجس حق میں ہمارا
مِنَ الْحَقِّ بِ إذْنِکَ، إنَّکَ تَھْدِی مَنْ تَشائُ إلی صِراطٍ مُسْتَقِیمٍ، وَانْصُرْنا
اختلاف ہے اپنے حکم سے اس کے ذریعے ہمیں ہدایت فرما بے شک تو جسے چاہیسیدھے راستے کی طرف لے جاتا ہے اس کے
بِہِ عَلَی عَدُوِّکَ وَعَدُوِّنا إلہَ الْحَقِّ آمِینَ اَللّٰھُمَّ إنَّا نَشْکُو إلَیْکَ فَقْدَ
ذریعے اپنے اور ہمارے دشمن پر ہمیں غلبہ عطا فرما اے سچے خدا ایسا ہی ہو۔ اے معبود ! ہم شکایت کرتے ہیں تجھ سے اپنے نبی (ص) کے
نَبِیِّنا صَلَواتُکَ عَلَیْہِ وَآلِہِ، وَغَیْبَۃَ وَلِیِّنا، وَکَثْرَۃَ عَدُوِّنا، وَقِلَّۃَ عَدَدِنا،
اٹھ جانے کی کہ ان پر اور ان کی آل(ع) پر تیری رحمت ہو اور اپنے ولی کی پوشیدگی کی اور شاکی ہیں دشمنوں کی کثرت اور اپنی قلت تعداد
وَشِدَّۃَ الْفِتَنِ بِنا، وَتَظاھُرَ الزَّمانِ عَلَیْنا، فَصَلِّ عَلَی مُحَمَّدٍ وَآلِہِ، وَٲَعِنَّا عَلی ذلِکَ
اور فتنوں کی سختی اور حوادث زمانہ کی یلغار کی شکایت کرتے ہیں پس محمد(ص) اور ان کی آل (ع)پر رحمت فرما اور ہماری مدد فرما ان پر فتح کے ساتھ
بِفَتْحٍ مِنْکَ تُعَجِّلُہُ، وَبِضُرٍّ تَکْشِفُہُ، وَنَصْرٍ تُعِزُّھُ، وَسُلْطانِ حَقٍّ تُظْھِرُھُ، وَرَحْمَۃٍ
اور اس میں جلدی کر کے تکلیف دور کردے نصرت سے عزت عطا کر حق کے غلبے کا اظہار فرما ایسی رحمت فرما جو ہم پر
مِنْکَ تُجَلِّلُناہا، وَعافِیَۃٍ مِنْکَ تُلْبِسُناہا، بِرَحْمَتِکَ یَا ٲَرْحَمَ الرَّاحِمِینَ۔
سایہ کرے اور امن عطا کر جو ہمیں محفوظ بنا دے رحمت فرما اے سب سے زیادہ رحم کرنے والے۔

Read Previous

دعائے جوشن کبیر

Read Next

غيبتِ امام زمان ميں دعا

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے