آستان قدس میں کرونا وائرس کے نفسیاتی اثرات کی تحقیقات کے لئے خصوصی اجلاس

کرونا وائرس کے پھیلنے سے مرتب ہونے والے نفسیاتی اثرات کی تحقیقات کے لئے آستان قدس رضوی کے اسلامی تحقیقاتی فاؤنڈیشن کے محققین اور ماہرین کی شرکت سے ایک خصوصی اجلاس منعقد ہوا ۔

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق،  آستان قدس رضوی کے  آبزرور  سینٹر کے سربراہ سید محسن اصغری نکاح نے اس  اجلاس  میں کرونا وائرس کے نفسیاتی اثرات کے مختلف  پہلوؤں  اور اس وائرس کا مقابلہ کرنے کے مناسب طریقوں   کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں نہ تو  کرونا وائرس سے حد سےزیادہ نہ ڈرنے کی ضرورت ہے اور  اس کو بہت معمولی  بھی نہيں سمجھنا چاہئے   ۔
انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ یہ وائر س ہمارے ملک میں پہنچ چکا ہے اور کسی بھی شخص کو یہ وائر س لگ سکتا ہے لہذا کسی  بھی  بند جگہ میں اجتماعی  پروگرام سے اجتناب   اور  وہاں جانے سے بچنا چاہئے ۔
محسن اصغری نکاح نے  کہا کہ  یہ وائرس روز بروز بڑھتا جارہا ہے اور اگر اس پر کنٹرول نہ کیا گیا تو یہ  مبتلا افراد سے دیگر لوگوں میں  بھی تیزی سے سرایت کرجائے گا  ۔  انہوں  نے  کہا کہ کمزور اور بوڑھے افراد اور وہ افراد کہ جو سانس کے مریض ہیں ، دل کے مریض اور کچھ خاص بیماریوں میں مبتلا ہیں،  وہ کرونا وائر س سے بہت جلد متاثر  ہو سکتے ہیں۔
مشہد مقدس کی  شہید بہشتی یونیورسٹی کے پروفیسر  اصغری نکاح نے کہا کہ کرونا سے بچنے اور اس کو  پھیلنے سے روکنے  کا سب سے بہترین طریقہ یہ ہے کہ زیادہ سے زیادہ گھر کے اندرہی  رہا جائے اور گھر سے باہر غیر ضروری آمد و رفت سے پرہیزکیا جائے ۔ انہوں نے   کہا    کہ یہ  وائر س بہت تیزی کے ساتھ پھیلتا ہے  اس لئے اس کو کٹٹرول کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ گھر میں ہی  آرام کیا جائے    ۔
پروفیسر محسن اصغری نکاح  نے مزید کہا: میڈیکل ریسرچ و تحقیقات سے معلوم ہوتا ہے کہ اگر کسی بند جگہ میں پینتالیس سے زائد  افراد ایک میٹر سے کم کے فاصلے پر ایک دوسرے کے ساتھ بیٹھے ہوں تو وہاں یہ وائرس بہت تیزی کے ساتھ پھیلتا ہے ا سی لئے تاکید کی جاتی ہے کہ لوگ اس ماحول میں اپنے اپنے گھروں میں   رہیں   ۔
آ‎ستان قدس رضوی کے  آبزرور سینٹرکے    ڈائریکٹر نے اس بات کا ذکرکرتے ہوئے  کہ اگرہم چاہتے ہيں کہ  اپنی عبادت کو بھی بہتر طریقے سے انجام  بھی   دیں  اور   کرونا وائر س سے بھی محفوظ رہیں تو  ہمیں چاہئے کہ   نماز جماعت اپنے گھروالوں کے ساتھ ادا کریں  اور اسی طرح  قرآن کریم کی تلاوت بھی سوشل میڈیا  پر اجتماعی طریقے  انجام دے سکتے ہیں ۔

Read Previous

حضرت شمس تبریز رحمتہ اللہ علیہ

Read Next

ثامن دوا ساز کمپنی میں جراثیم کش دواؤں کی پروڈکشن لائن کا افتتاح

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے